سیلاب زدگان کی امداد کے لئے قابل عمل تجاویز

تحریر : طیب خان

 

ہمارا عزیز وطن پاکستان، ان دنوں ایک تباہ کن سیلاب کی لپیٹ میں ہے ،جسے دنیا کی تاریخ کا 80واں عظیم سیلاب کہا جارہا ہے ۔ اس سیلاب میں جہاں ہمارے سینکڑوں ہم وطن جاں بحق ہوئے ہیں ، وہاں لاکھوں بے گھر بھی ہو گئے ہیں ۔ عام پاکستانیوں کے ساتھ ساتھ ، دیار غیر میں مقیم پاکستانی بھی ، مصیبت کی اس گھڑی میں اپنے ہم وطنوں کی ہر طرح امداد کی کوششیں کر رہے ہیں ۔

جاپان میں مقیم پاکستانی کمیونٹی بھی امداد کی کوششوں میں مصروف ہے ۔ہماری کوشش ہونی چاہئے کہ ہم اپنے ہموطنوں کی امداد کے لئے ہر طریقہ استعمال کریں ۔ ہمارے اکثر بھائی سوال کرتے ہیں کہ ہم کیا کر سکتے ہیں ؟ ہم بہت کچھ کر سکتے ہیں ۔ مثال کے طور پر چند ممکنہ اقدامات یہ ہو سکتے ہیں ۔

1 ۔ ہم ذاتی طور پر سیلاب زدگان کے لئے عطیات دیں ۔

2 ۔ اپنے کاروبار یا کمپنی سے امداد کریں ۔ اس امداد پر ہمیں ٹیکس میں چھوٹ بھی مل سکتی ہے ۔

3 ۔ اپنی کمپنی میں کام کرنے والے ملازمین کو ، ایک یا دو دن کی تنخواہ سیلاب فنڈ میں دینے کی جانب مائل کریں ۔

4۔ گاڑیوں کی برآمد کرنے والے کاروباری افراد ، ہر گاڑی کی قیمت میں سیلاب فنڈ کے لئے ایک مخصوص رقم کا اضافہ کر سکتے ہیں ۔فی گاڑی معمولی رقم سے بھی مجموعی طور پر کافی فنڈ اکٹھا ہو سکتا ہے ۔

5 ۔ جن مقامی (جاپانی) لوگوں سے ہمارا لین دین ہے ، ہم انہیں صورت حال بتا کر ان سے مدد کی درخواست کر سکتے ہیں ۔

6 ۔ جن لوگوں نے جاپانیوں سے شادی کی ہوئی ہے ، وہ اپنے جاپانی عزیز و اقارب سے تعاون کی درخواست کر سکتے ہیں ۔

یہ چند موٹی موٹی باتیں ہیں ، جن پر عمل کرکے ہم اپنے سیلاب زدہ بھائیوں کی کافی امداد کر سکتے ہیں ۔ ان کے علاوہ ، ہم اپنے ارد گرد موجود جاپانی و غیر ملکی افراد سے بھی اس کار خیر میں حصہ لینے کی درخواست کر سکتے ہیں ۔

جاپان میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کے کئی افراد اپنے طور پر رقوم اور سامان اکٹھا کرنے کی مہم چلا رہے ہیں ، جو بہت اچھی اور قابل تعریف بات ہے ۔ ہم سفارت خانے کے قائم کردہ وزیر اعظم فنڈ میں بھی عطیات جمع کروا سکتے ہیں ، کیونکہ وزیر اعظم کسی پارٹی کے نہیں ، بلکہ پورے ملک کے وزیر اعظم ہیں ۔

آئیں ، ہم اپنے ذاتی اور اندرونی اختلافات بھلا کر ، اپنے سیلاب زدہ بھائیوں کی مدد کے لئے ، صدق دل سے، نیک نیتی سے ، پیار و محبت سے ، کوششیں کریں ۔ آئیے ، ہم ان کی امداد کے لئے اپنے تمام وسائل کا استعمال بھی  کریں ، اور اللہ تعالیٰ سے دعا بھی کریں کہ وہ ان کی مشکلات کو آسان فرمائے ۔              آمین ۔