نیا ہجری سال اور رویت ہلال کمیٹی جاپان

 

 الحمد للہ نئے ہجری سال سنہ 1433ھ کا آغاز ہو چکا ہے ۔ پاکستان میں اتوار 27 نومبر کو یکم محرم الحرام تھی ۔ جاپان میں ہجری سال کا آغاز 26 نومبر کو ہوا یا 27 نومبر کو، اس بارے میں کسی اسلامی ادارے کا کوئی اعلان سامنے نہیں آیا ۔ اسلامک سینٹر جاپان کی ویب سائٹ بھی اس معاملے میں خاموش ہے اور رویت ہلال کمیٹی جاپان بھی۔
بنیادی طور پر ہر نئے اسلامی مہینے کا اعلان رویت ہلال کمیٹی کی ذمہ داری ہے ، کیونکہ یہ کمیٹی رویت ہلال کے لیے ہی قائم کی گئی ہے ۔ حال ہی میں اس کے انتخابات بھی ہوئے ہیں اور چیئرمین اور سیکرٹری کو 3 سال کے لیے منتخب کیا گیا ہے ۔ البتہ یہ واضح نہیں ہے کہ اس کمیٹی کے ارکان کون کون ہیں، اور اس کے انتخابات میں ووٹ دینے کا حق کسے ہے۔ بہرحال کسی بھی تنظیم میں جمہوری انداز میں انتخاب ہونا تو یقیناً خوش آئند ہے، لیکن اس انتخاب کا مقصد اُس تنظیم کو بہتر طور پر چلانا ہی ہوتا ہے ۔
رویت ہلال کمیٹی جاپان کا بنیادی کام یہ ہے یہ کمیٹی جاپان میں ہر قمری ماہ کے آغاز کے لیے چاند کی رویت کی تصدیق کرے ۔ اس کے لیے یقیناً کمیٹی کے عہدیداران کو خود بھی چاند دیکھنے کی کوشش کرنی چاہیے اور دیگر مسلمانوں کو بھی اس جانب مائل کرنا چاہئے۔ لیکن لگتا ہے کہ کمیٹی کا کام صرف رمضان اور شوال کے چاند کی رویت تک محدود ہو کر رہ گیا ہے ۔ حالنکہ ان کی ذمہ داری سال کے تمام 12 مہینوں کے لیے ہے۔
رویت ہلال کمیٹی کے بعض مخالفین کا خیال ہے کہ الگ کمیٹی بنانے کی ضرورت نہیں تھی، اور یہ کام اسلامک سینٹر کو کرنا چاہئے۔ لیکن گزشتہ کئی سالوں سے یہ کمیٹی جب کسی انتخاب کے بغیر سینٹر میں ہوتی تھی تب بھی اس کا یہی حال تھا۔ تمام اسلامی مہینوں کے آغاز کے اعلانات اُس وقت بھی نہیں کئے جاتے تھے ۔ اب بھی اسلامک سینٹر کی جانب سے نئے ہجری سال کے آغاز کی کوئی اطلاع نہیں ہے ۔ چنانچہ یہ کام سینٹر کے حوالے کرنے سے بھی کسی بہتری کی امید نہیں ہے۔ یہ کام جاپان میں مقیم مسلمانوں کو اجتماعی طور پر ہی کرنا ہوگا، اور اس کے لیے سوئی ہوئی رویت ہلال کمیٹی کو جگانا ہوگا۔