پاکستان ایسوسی ایشن جاپان کےعہدیداروں کو غیر سیاسی ہونا چاہئے

رپورٹ : راشد صمد خان(صدارتی امیدوار برائے پاکستان ایسوسی ایشن جاپان)

پاکستان ایسوسی ایشن ایک فلاحی اور کسی ملک کی نمائندہ تنظیم کی حیثیت سے کام کرتی ہے۔  اس لئے ہمیں کسی سیاسی مذہبی اور سماجی گروپنگ سے بالاتر ہو کر غیر جانبدار رہ کر اس میں حصہ لینا چاہئے۔ وہ لوگ جو صدر یا نائب صدر کے عہدے کے امید وار ہیں، انھیں بھی کمیونٹی کے بہتر مفاد کے لئے غیر سیاسی ہو نا چاہئے تاکہ صدر بن کر اُس پر کسی قسم کا دباؤنہ ہو اور وہ پوری کمیونٹی کو ایک ساتھ لیکر چلے ۔اسی لئے راقم نے بھی جو کہ اس الیکشن میں صدارتی امید وار ہے،  اپنے عہدے اور بنیادی رکنیت سےاستعفیٰ  اپنی تنظیم کے صدر کو بھیج دیا ہے، جو کہ فوری لاگو ہو گا ۔ بجائے اسکے کہ الیکشن کمیشن اس طرح کی پابندی لگائے، خود ہم لوگوں میں شعور ہو نا چاہئے کہ کمیونٹی کے لئے کیا اچھا ہے اور کیا بُرا۔
پاکستان ایسوشی ایشن کے الیکشن اسی طرح کے ہیں جیسا کہ پاکستان میں کسی مارکیٹ کمیٹی کے۔  لیکن جاپان میں کچھ لوگوں نے اسے انا اور زندگی و موت کا کھیل بنا لیا ہے ۔ وہ الیکشن میں حصہ کمیونٹی کی بھلائی کے لئے نہیں، بلکہ  ایک دوسرے کو ہرانے کے لئے یا ذاتی مفادکیلئے لیتے ہیں، جو کہ کمیونٹی کی سب سے بڑی بد قسمتی ہے۔  کاش کہ یہ تمام لوگ اچھے کام کرنے میں ایک دوسرے سے برتری حاصل کرنے کے لئے الیکشن میں حصہ لیں۔ میری تمام پاکستانی کمیونٹی سے التجا ہے خدارا کمیونٹی اتحاد کے لئے اپنے آپ کو گروپوں سے نکالیں ۔یاری دوستی کی خاطر غلط لوگوں کو ووٹ دیکر ماضی کی غلطیاں نہ دہرائیں۔آپ اپنے نظریات اور ہمدردیاں کسی بھی سیاسی مذہبی سماجی جماعت کے ساتھ رکھیں، لیکن ایک خوبصورت صحت مند کمیونٹی کے خاطر ایک دفعہ کسی دوست کے بجائے اپنے ضمیر کی آواز مان کر دیکھیں ۔ مجھے امید ہے کہ کامیابی آپ ہی کی ہو گی۔ایسے لوگوں کو منتخب کریں جو عہدں کے لالچی نہ ہوں بلکہ کام کرنے کے جنونی ہوں۔