سفارتخانے کے تحت پاکستان ایسوسی ایشن جاپان کےانتخابات  کے التواء پر تبصرے

 

سفارتخانہ پاکستان واقع جاپان نے ’پاکستان ایسوسی ایشن جاپان‘ کے اگلے انتخابات  خود منعقد کروانےکا اعلان کیا تھا۔تاہم، اب  ان انتخابات کو غیر معینہ مدت تک کے لیے ملتوی کردیا گیا ہے۔التواء کے اس اعلان پر بھی کمیونٹی میں حمایت اور مخالفت میں آوازیں اٹھ رہی ہیں۔ اس سلسلے میں ادارہ پاکستانی جے پی کو  کمیونٹی کے تین افراد کے  بیانات موصول ہوئے ہیں، جو ذیل میں پیش کئے جارہے ہیں۔

راشد صمد کا بیان :
کمیونٹی کے اندیشوں کے مطابق پاکستان ایمبیسی اپنے کئے ہوئے وعدوں سے مُکر گئی اور ہمیشہ کی طرح بااثر لوگوں کے دباؤ میں آکر پاکستان ایسوسی ایشن کے انتخابات ۰۳ جون تک کے لئے ملتوی کر دیئے گئے ۔جن لوگوں کی وجہ سے کمیونٹی کا حال یہاں تک پہنچا، آج انہی کے آگے گھٹنے ٹیک دئے ۔اب سوچنا یہ ہے کہ کمیونٹی ایمبیسی پر عتبار کرے یا پھر ان لوگوں پر جو پہلے متنازعہ الیکشن کرا چکے ہیں۔اگر ایمبیسی کو اپنے وعدوں پر قائم نہیں رہنا تھا تو یہ انتہائی قدم کیوں اٹھایا گیا؟۲ فیصد ووٹنگ پر فیصلہ دینے والے وعدے کدھر گئے؟ایمبیسی، پاکستان ایسوسی ایشن جاپان کے الیکشن وقت پر نہ کرانے پراپنی ناکامی کا عتراف کرے۔ الیکشن کروانے کے لئے ۲ گھنٹوں کی بریفنگ دی گئی، لیکن انتخابات کی تاریخ تبدیل کرنے پر ٖصرف ایک چھوٹا سا نوٹیفیکیشن ۔ شاید ڈی سی ایم صاحب شرمندگی کی وجہ سے کمیونٹی کے سامنے آنے سے کترا رہے ہیں۔

الطاف غفار کا بیان :
پاکستان ایسوسی ایشن کے قائم مقام صدر عمران بٹ،جنرل سیکریٹری الطاف غفار اور فنانس سیکریٹری امین سجن نے سفارت خانہ پاکستان کی جانب سے ایسوسی ایشن کے انتخابات کی تاریخ میں توسیع کے اعلان کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ نئے سفیر جناب فرخ عامل صاحب نے کمیونٹی کی رائےکو اہمیت دیتے ہوئے ان کی تجویز کو قابل قدر جانا جس پر پوری کمیونٹی ان کا شکریہ ادا کرتی ہے اور ان سے یہ امید کرتی ہے کہ وہ کمیونٹی کی رائے کے پیش نظر جلد ہی ان سے مشاورتی عمل شروع کریں گے اور کمیونٹی کے ساتھ مل کر انتخابات کروائیں گے۔ان رہنماوؑں نے مزید کہا کہ اب چونکہ انتخابات میں وقت ہے تو ابھی سے اس کا منظم انداز میں پروپیگنڈہ کیا جائےاور ایک ایک کمیونٹی کے فرد کو یہ پیغام پہنچایا جائے تاکہ ہر کوئی اس میں شریک ہو سکے اور ایک مضبوط ایسوسی ایشن وجود میں آسکے۔

نعیم آرائیں  کا بیان :
پاکستان ایسوسی ایشن جاپان انتخابات ۳۱۰۲ کے صدارتی امیدوار جناب نعیم الغنی آرائیں نے ایمبیسی کی طرف سے الیکشن کی تاریخ میں توسع کرنے پر کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے بیان دیا ہے کہ پاکستان ایسوسی ایشن کے کسی بھی امیدوار سے مشورہ لئے بغیر اس طرح کا فیصلہ کرنا کہا ں کا انصاف ہے ۔کسی کو ٹیلی فون تک نہیں کیا گیا ۔انھوں نے کہا کہ ایسے لوگوں کی سنی جا رہی ہے جو کبھی بھی کمیونٹی کے خیرخواہ نہیں رہے اور اپنی ہار کے ڈر سے کاغذات تک جمع نہیں کرائے۔ماضی میں انھی غلطیوں کی وجہ سے انتشار پیدا ہوتے رہے ہیں۔ جس نے جو وعدہ کیا پورا نہیں کیا اور اگرایمبیسی بھی ایسا کرے گی تو ایسا لگے گا کہ وہ بھی کمیونٹی سے مذاق کر رہی ہے۔پاکستان ایمبیسی جاپان ،پاکستان ایسوسی ایشن کے انتخابات کی توسیع کے فیصلے کو فوراًِواپس لے اور اپنے وعدے کے مطابق الیکشن کرا کر سرخرو ہو۔