ٹوکیو میں پاکستان کے متعلق سمپوزیم ۔ اذان سے نماز تک ، پاکستانیوں کی پوری زندگی۔

 

ہفتہ 6 نومبر کوٹوکیو جاپان پاکستان ایسوسی ایشن  کا سالانہ سمپوزیم کا منعقد کیا گیا ۔ سمپوزیم کا موضوع تھا ۔ ‘‘اذان سے نماز تک ۔ پاکستانیوں کی پوری زندگی’ ’۔سمپوزیم  میں کوئی 50 افراد شریک ہوئے، جن میں اکثریت جاپانیوں کی تھی ، تاہم سفیر پاکستان سمیت چند پاکستانی باشندوں نے بھی اس میں شرکت کی ۔

سمپوزیم کےابتدائی حصے میں، جاپان میں پاکستان کے سفیر جناب نور محمد جادمانی نے پاکستان میں سیلاب کی صورتحال اور اس کے بعد کی امدادی اور بحالی کی سرگرمیوں پر روشنی ڈالی ۔اکستان اور دیگر ترقی پذیر ممالک میں زراعت کی ترقی کے لئے خدمات انجام دینے والے، پروفیسر ہیراشیما نے پاکستان کی اقتصادی صورتحال اور مستقبل کے امکانات کا ایک جائزہ پیش کیا ۔ان کے بعد ، جاپان کی ایک سیاحتی کمپنی سے تعلق رکھنے والی محترمہ ناکاتانی صاحبہ نے پاکستان کے سیاحتی تنوع اور سفر کی موجودہ صورتحال سے آگاہ کیا ۔

سمپوزیم کے ابتدائی حصے کی تقاریر کے بعد ، دوسرے حصے میں سمپوزیم کے مرکزی موضوع ، ‘‘اذان سے نماز تک ، پاکستانیوں کی پوری زندگی’’ کے بارے میں ایک پینل ڈسکشن کا پروگرام تھا ،جو عام پاکستانی کی روزمرہ زندگی کے بارے میں تھا ۔ پینل ڈسکشن کے ذریعے، پیدائش کے وقت کان میں دی جانے والی اذان ،سے نماز جنازہ تک ، پاکستانیوں کی پوری زندگی کے بارے میں حاضرین کو بتایا گیا۔پاکستانیوں کی زندگی میں بچپن سے بڑھاپے تک کے مختلف ادوار اور تقریبات ، مثلاً عقیقہ ، ختنہ ، رسم بسم اللہ ، روزہ کشائی ، تعلیمی دور ،منگنی ، شادی ، موت کے وقت کی رسومات اور جنازے اور تدفین کے بارے میں گفتگو ہوئی ، اور گفتگو کے دوران مختلف تصاویر اور وڈیو بھی دکھائی گئیں۔

پینل ڈسکشن میں نظامت کے فرائض راقم (محمد انور میمن) نے انجام دئے ۔ میرےساتھ گفتگو میں ،پاکستان ایسوسی ایشن جاپان کے جنرل سیکرٹری جناب الطاف غفار ،   ایک پاکستانی  سے شادی کے بعد طویل عرصہ پاکستان میں گزارا نےوالی محترمہ ماریکو شاہ ، اور جناب مورایاماشریک ہوئے ۔ جناب مورایاما ،واکو یونیورسٹی کے استادہیں ،اور انھیں بلوچی اور براہوی زبانوں سے بھی خاصی واقفیت ہے ۔

حاضرین نے پاکستان کے مختلف خطوں میں شادی کی مختلف رسومات میں خصوصی دلچسپی لی ۔پاکستان کی  ثقافت کے حوالے سے لوک داستان ہیر رانجھا کے بارے میں بھی گفتگو ہوئی  ، جسے بہت پسند کیا گیا ۔

یہ جاپان پاکستان ایسوسی ایشن  کا 24واں سالانہ سمپوزیم تھا ۔ اس تنظیم کا قیام ، پاکستان کے قیام کے اگلے سال ، پاک جاپان اقتصادی تعلقات کے فروغ کے لئے عمل میں آیا تھا ۔ اس کے ارکان پاکستان سے کسی نہ کسی قسم کا تعلق یا لگاؤ رکھنے والے افراداور ادارے ہیں ۔150سے زائد افراد ، اور 30 سے زائد کاروباری ادارے اس ایسوسی ایشن کے رکن ہیں ، جن کی اکثریت جاپانی باشندوں اور جاپانی کاروباری اداروں کی ہے ۔مذکورہ تنظیم جاپانیوں کو پاکستان کے بارے میں معیشت سےرسومات و ثقافت تک ، ہر قسم کی معلومات مہیا کرتے ہوئے ، جاپان اور پاکستان کے درمیان ایک انتہائی اہم پل کا کردار انجام دے رہی ہے ۔

سمپوزیم کے بارے میں NHK World ریڈیو جاپان کی اردو سروس سے ، منگل کے روز ایک رپورٹ بھی نشر کی گئی ، جسے درج ذیل لنک کے ذریعے سنا جاسکتا ہے ۔

NHK World Radio Japan - Pakistan Symposium Report