جاپان کے آئین کی تیاری میں معاونت کرنے والی امریکی خاتون انتقال کرگئیں۔

 

جنگ عظیم دوم میں جاپان کی شکست کے بعد جاپان کے نئے (موجود) آئین کا بڑا حصہ، فاتح اتحادی افواج کے جنرل ہیڈکوارٹرز کے تحت تدوین کیا گیا تھا۔ محترمہ ’بیٹے گورڈن‘ نے آئین کی انسانی حقوق سے متعلق دفعات لکھنے میں معاونت کی تھی، جن میں صنفی مساوات والی دفعہ 24 خاص طور پر قابل ذکر ہے۔ اس سے قبل جاپان میں مرد و خواتین کو مساوی حقوق حاصل نہیں تھے۔

ویانا میں پیدا ہونے والی محترمہ گورڈن ،پہلی بار 1929 میں، اپنے عالمی شہرت یافتہ پیانو نوازوالد  ’لیو گورڈن‘ کے ساتھ جاپان آئی تھیں، اور 1939 تک رہی تھیں۔ بعد ازاں امریکہ میں کالج تعلیم حاصل کرنے کے بعد  انہوں نے امریکی شہریت حاصل کرلی۔ وہ 1945 میں دوبارہ جاپان آئیں، اور GHQ میں مترجم کے طور پر خدمات انجام دیتی رہیں۔ اسی دوران انہوں نے جاپانی آئین کی تیاری میں معاونت کی۔ آئین کے الفاظ کے انتخاب پر حکومت جاپان اور اتحادی افواج کے درمیان بات چیت میں انہوں نے اہم کردار ادا کیا۔

محترمہ گورڈن کا انتقال، اتوار 30 دسمبر کو نیویارک میں ان کے گھر میں ہوا۔ ان کی عمر 89 برس تھی۔